پاکستان نہیں بلکہ یہ پوراملک بھارتی نشانے پرنئے خطرے کی گھنٹی بج اُٹھی
  • 0
  • 0

http://tuition.com.pk
missile china india

امریکی جوہری ماہرین نے انکشاف کیا ہے کہ بھارت اپنے ایٹمی اثاثوں کی تجدید کا عمل جاری رکھے ہوئے ہے اور اب وہ ایسے میزائلوں کی تیاری میں مصروف ہے جنہیں چین کے کسی بھی حصے پر داغا جا سکتا ہے۔

 امریکی دفاعی ماہرین ہینز ایم کرسٹینسن اور روبرٹ نورِس نےدعویٰ کیا ہے کہ اب بھارت کی توجہ کا مرکز تبدیل ہو چکا ہے اور وہ پاکستان کے بجائے چین کو مدنظر رکھتے ہوئے اپنی جوہری حکمت عملی ترتیب دے رہا ہے۔ ان دو مصنفوں کی جانب سے یہ دعویٰ بھی کیا گیا کہ بھارت ایسے میزائلوں کی تیاری میں بھی مصروف ہے جن کی مدد سے وہ ملک کے جنوبی حصے میں واقع فوجی اڈوں سے پورے چین کو نشانہ بنا سکے۔ عام اندازے کے مطابق بھارت نے اتنا پلوٹونیم تیار کر رکھا ہے جو 150 سے 200 جوہری ہتھیاروں کی تیاری کے لیے کافی ہے البتہ اب تک اس نے 120 سے 130 میزائل تیار کیے ہیں۔امریکی ماہرین نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ حکمت عملی میں ہونے والی اس تبدیلی سے آئندہ 10 برس کے دوران بھارت کی جوہری استعداد میں اضافہ ہو سکتا ہے اور پاکستان کے خلاف جوہری ہتھیاروں کے کردار پر بھی اثر پڑ سکتا ہے۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ بھارت متعدد نئے نیوکلیئر ویپن (ہتھیار) سسٹمز تیار کررہا ہے اور اس وقت بھارت کے پاس 7 ایسے سسٹمز موجود ہیں جہاں سے ایٹمی ہتھیاروں کو آپریٹ کیا جا سکتا ہے،

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں