آئی فون 8، سام سنگ ایس 8اور دیگر جدید موبائل فونز کی بیٹری میں دراصل کیا فرق ہے؟
  • 0
  • 0

http://tuition.com.pk
difference battery samsung

سمارٹ فونز کے صارفین کو ان میں جس چیز پر سب سے زیادہ تحفظات لاحق ہوتے ہیں وہ ان کی بیٹری ہے۔

جوں جوں سمارٹ فونز ٹیکنالوجی کی جدت کے باعث طاقتور ہوتے جا رہے ہیں ان کی بیٹری لائف صارفین کے لیے زیادہ پریشان کن ہوتی جا رہی ہے اور ان کا پاور بینک اور بیٹری پیکس پر انحصار بڑھتا جا رہا ہے ۔ تاہم اب جدید تحقیق میں تمام بڑے برانڈز کے سمارٹ فونز کی بیٹریوں میں فرق اور ان کی توانائی محفوظ کرنے کی گنجائش بتا دی اور یہ بھی بتا دیا ہے کہ کتنی طاقت کا پاور بینک کس موبائل فون کی بیٹری کتنی بار ری چارج کر سکتا ہے۔

’یو ایس بی میکرز‘ نامی کمپنی کے ماہرین نے اس تحقیق میں بتایا ہے کہ ہر فون کی بیٹری میں کرنٹ محفوظ کرنے کی گنجائش مختلف ہوتی ہے چنانچہ ایک ہی پاور بینک مختلف فونز کی بیٹریوں کو کم یا زیادہ بار ری چارج کرتا ہے۔

ماہرین کا کہنا تھا کہ ”اگر آپ کے پاس 5800ملی امپیئر فی گھنٹہ طاقت کا حامل پاور بینک ہے تو یہ آئی فون 8کی بیٹری دو بار مکمل اور تیسری بار اس کا پانچواں حصہ ری چارج کرے گا، جبکہ یہی پاور بینک گلیکسی ایس8کی بیٹری تین بار مکمل ری چارج کر دے گا۔ پاور بینک 3000ملی امپیئر فی گھنٹہ توانائی محفوظ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے تو یہ آئی فون 8کو ایک بار مکمل اور دوسری بار اس کا پانچواں حصہ جبکہ گلیکسی ایس 8کی بیٹری صرف ایک بار ری چارج کرے گا۔2600ملی امپیئر فی گھنٹہ طاقت والا پاور بینک آئی فون کی بیٹری ایک بار مکمل اور گلیکسی ایس 8کی بیٹری 5میں سے 4حصے ری چارج کرے گا۔“

بیٹری کے حوالے سے لوگوں کے ذہنوں میں ایک سوال یہ بھی اٹھتا ہے کہ آیا تمام رات چارجنگ پر لگائے رکھنے سے بیٹری خراب تو نہیں ہو جاتی۔ اس حوالے سے ماہرین نے بتایا ہے کہ ”سمارٹ فونز کو اچھی طرح معلوم ہوتا ہے کہ انہیں کب چارجنگ بند کرنی ہے۔ ان میں ایک چِپ (Chip)لگی ہوتی ہے جس کی وجہ سے جب بیٹری بھر جائے تو فون ازخود پاور بینک یا چارجر سے کرنٹ لینا بند کر دیتے ہیں۔لہٰذا تمام رات چارجر پر لگے رہنے سے بیٹری پر کوئی منفی اثر نہیں پڑتا۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں