قومی کرکٹرز کے دماغوں پر برف کی ٹکورکی جائے: رمیز راجہ
  • 0
  • 0

http://tuition.com.pk
cricketers match rameez raja

تفصیلات کے مطابق ایک انٹرویو میں رمیز راجہ نے کہا کہ چیمپئنز ٹرافی کے بعد اس مشکل سیریزکی تیاری کیلیے کوئی ہوم ورک ہی نہیں کیا گیا

مختلف کنڈیشنز کا سامنا ہوا تو ہمارے وکٹیں لینے والے بولرزمار کھاتے رہے، جارحیت دکھانے سے تو کارکردگی سامنے نہیں آتی، بولرزوکٹیں لے سکے نہ رنزکا سیلاب روک پائے، بیٹسمین باؤنسرز پرگھبراہٹ کا شکار نظر آئے، نیوزی لینڈ آدھی جنگ تو ذہنی طور پرجیت جاتا ہے۔ کیویز نے اپنی قوت اور پلان کے مطابق بیٹنگ کرکے ہر حربہ ناکام بنایا۔ دوسری جانب میزبان پیسرز کنڈیشنز کا بہترین استعمال کررہے ہیں، باؤنسرز، لائن و لینتھ اور پیس میں تبدیلی کیساتھ پاکستان کی متزلزل بیٹنگ کو مزید پریشان کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں۔انھوں نے اپنی حکمت عملی کے تحت ہر اوور میں ایک باؤنسرکروایا، گرین شرٹس اس کو کھیلنے کی فکرمندی میں وکٹیں قربان کرتے گئے،اچھی شراکتیں نہیں بن سکیں، ڈاٹ بال بھی بہت زیادہ کھیلے گئے، سینٹنر اور ایسٹل کلب سطح کے اسپنرز ہیں، گیند ٹرن نہیں ہوتی نہ سلو بولرزکو مدد ملتی ہے لیکن پاکستان نے ان کو بھی وکٹیں دیدیں، پیسرز کو نہیں کھیل پارہے، اسپنرز کا سامنا مشکل ہورہا ہے۔ رمیز راجہ نے کہا کہ نیوزی لینڈ آدھی جنگ تو ذہنی طور پر جیت جاتا ہے، ہر کھلاڑی خاموشی سے اپنا کردارادا کررہا ہوتا ہے، پاکستانی کرکٹرز کے دماغوں پر برف کی ٹکور کریں تو شاید حریف اورکنڈیشنز کو سمجھ جائیں اور اس کے مطابق کارکردگی دکھانے کی کوشش کریں۔شاداب خان نیوزی لینڈ کیخلاف بیٹنگ پرفارمنس پرخوش لیکن ٹیم کی شکست پر مایوس ہیں۔ نیلسن میں کھیلے گئے سیریز کے دوسرے میچ کے بعد بات کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ ابتدائی وکٹیں جلد گرنے کے بعد ٹیم کو رنز کی ضرورت تھی خوشی کی بات ہے کہ میں نے مشکل وقت میں ففٹی بنائی، حسن علی نے بھی ٹوٹل بہتر بنانے میں اہم کردار اداکیا۔ انھوں نے کہا کہ تمام بیٹسمین نیٹ میں پریکٹس سیشنز کا بھرپور فائدہ اٹھاتے ہیں، اس لیے میچ میں کریز پر قیام اوراچھے اسٹروکس کھیلنے میں کامیاب ہوئے۔ لیگ اسپنر نے کہا کہ کنڈیشنز مشکل ہونے کی وجہ سے بولنگ میں کارکردگی توقعات کے مطابق نہیں رہی، امید ہے اگلے میچز میں بہتر پرفارم کریں گے۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں