سکول کا 16 سالہ طالب علم 12 لاکھ روپے ماہانہ کمانے لگا ،کیا آپ بھی ایسا کر سکتے ہیں؟ طریقہ انتہائی آسان ۔۔۔!
school boy lack earning

16 سالہ نوجوان کی گوگل میں ملازمت کیسے ملی اور سیلری کتنی جان کر آپ حیران رہ جائیں گے؟

گوگل کا شمار دنیا کی کامیاب ٹیکنالوجی کمپنیوں میں کیا جاتا ہے جہاں کام کرنا یقیناً ہر نوجوان کا خواب ہوگا لیکن کیا ہندوستان کے شہر چندی گڑھ سے تعلق رکھنے والے 16 سالہ نوجوان نے سوچا تھا کہ اتنی کم عمر میں اسے اس ادارے میں کام کرنے کا موقع مل جائے گا؟چندی گڑھ کے ایک گورنمنٹ اسکول میں 12ویں جماعت کا طالب علم ہرشیت شرما کی قسمت اس وقت تبدیل ہوگئی جب انہیں گوگل جیسے ادارے میں 144 ملین ہندوستانی روپے یعنی تقریباً 2 کروڑ 37 لاکھ پاکستانی روپے سالانہ کی ملازمت پر رکھ لیا گیا۔وہ گوگل کمپنی میں ایک گرافک ڈیزائنر کے طور پر کام کریں گے۔اس حوالے سے ایک انٹرویو میں ہرشیت شرما کا کہنا تھا کہ ’کون جانتا تھا کہ میرے جیسے عام سےطالبعلم کو گوگل میں نوکری کرنے کا موقع ملے گا، میں اپنی خوشی بیان نہیں کرسکتا، میرا خواب پورا ہوگیا، میری محنت کا پھل مجھے مل گیا‘۔نوکری کے پہلے سال انہیں کمپنی کی جانب سے ٹریننگ دی جائے گی، ٹریننگ کے دوران ہرشیت کو کمپنی 6 لاکھ 58 ہزار پاکستانی روپے دے گی، جس کے مکمل ہونے پر انہیں ماہانہ 19 لاکھ 70 ہزار روپے دیے جائیں گے۔ہرشیت 10 سال کی عمر سے گرافک ڈیزائنگ کا کام کررہا ہے، ہرشیت کو اس کے انکل روہت شرما نے ٹریننگ دی۔گوگل میں کام کرنے سے قبل ہرشیت کئی اور گرافک ڈیزائنگ کی ملازمتیں کرچکا ہے۔اس حوالے سے انہوں نے بتایا کہ ’اپنے اسکول کے دوران میں بولی وڈ اور ہولی وڈ فلموں کے پوسٹرز تیار کرتا تھا جس کے مجھے 40 سے 50 ہزار روپے ملتے تھے‘۔دلچسپ بات یہ ہے کہ ہرشیت شرما نے کسی تعلیمی ادارے سے گرافک ڈیزائننگ کا کام نہیں سیکھا۔انہوں نے گزشتہ سال دسمبر میں گوگل کی ملازمت کے لیے اپنا کام بھیجا تھا، اور رواں سال جون میں گوگل نے ان کا انتخاب کیا۔گوگل میں ملازمت کے حوالے سے ہرشیت کو ہندوستان کی حکومت نے اعزاز کے طور پر 11 ہزار 5 سو روپے کا انعام بھی دیا۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں