جو بیویاں اپنے شوہر کو مجازی خدا نہیں سمجھتیں،انکے بارے اسلام کیا کہتا ہے؟
  • 0
  • 0

http://tuition.com.pk
husband islam wife

ہمارے معاشرے میں بیویوں کو حکم دیا جاتا ہے کہ وہ اپنے شوہر کو مجازی خدا سمجھا کریں ۔صدیوں سے یہ اصول ایسا رائج رہا ہے کہ جس نے سماجی زندگی میں بیوی کو باندی یا غلام بنا کر رکھا ہوا ہے ،مردوں کو بالادستی کوراستہ دکھایا ہے۔

اس حوالہ سے اکثر لوگ سوال بھی اٹھاتے ہیں کہ کیا اسلام نے مرد کو مجازی خدا کا درجہ دیا ہوا ہے اور اگر کوئی عورت شوہر کومجازی خدا نہ سمجھے تو اسکی سزا کیا ہے ۔اس سنگین سوال اور روایت پر ادارہ منہاج القرآنکے آن لائن فتوٰی میں یہ جواب دیا گیا ہے کہ اسلام میں ایسی کوئی سزا نہیں نہ ہی اسلام شوہر کو مجازی خدا قرار دیتا ہے۔یہ ہندوانہ رسومات اور کلچر کا حصہ ہے ۔اسلام نے نکاح کو خاندان کی بنیاد بنایا ہے اور زوجین پر ایک دوسرے کے فرائض مقرر کیے ہیں۔ چنانچہ بیوی پر شوہر کے حقوق ہیں اور شوہر پر بیوی کے حقوق ہیں۔ اللہ سبحانہ و تعالی کا سورہ البقرہ میں ارشاد ہے ’’اور دستور کے مطابق عورتوں کے بھی مردوں پر اسی طرح حقوق ہیں جیسے مردوں کے عورتوں پر، البتہ مردوں کو ان پر فضیلت ہے۔‘‘ سورہ النساء میں اس فضیلت کا سبب یوں بیان کیا ہے کہ ’’مرد عورتوں پر محافظ و منتظِم ہیں اس لئے کہ اللہ نے ان میں سے بعض کو بعض پر فضیلت دی ہے اور اس وجہ سے (بھی) کہ مرد (ان پر) اپنے مال خرچ کرتے ہیں۔‘‘اسلام کی نظر میں مرد اور عورت دونوں انسان ہونے کی حیثیت سے برابر ہیں‘ عورت کسی بھی طرح کمتر یا حقیر نہیں۔ اسلام نے خاندان کو ایک ادارے کے طور پر پیش کیا ہے اور شوہر و بیوی اس کے ارکان ہیں۔ جس طرح کسی ادارے میں فرد کو منصب اس کی اہلیت کی بنا پر دیا جاتا ہے اسی طرح خاندان میں شوہر اور بیوی کے فرائض ان کی جسمانی ساخت اور فطرت کی بنیاد پر طے کیے گئے ہیں۔ شوہر کو گھرکا رکھوالا یا منتظم تسلیم کیا گیا ہے اس اعتبار سے وہ عورت کا نگران و محافظ اور گھر کا سربراہ ہے۔شوہر کو اگرچہ اس کی ذمہ داریوں کی وجہ سے گھر میں فوقیت حاصل ہے مگر اس کا قطعاً یہ مطلب نہیں ہے کہ وہ اپنی بیوی کے لیے خدائی کے درجے تک پہنچ گیا ہے۔ یہ ہمارے معاشرے کی جہالت اور ہندوانہ رسومات کا اثر ہے۔ شوہر کو مجازی خدا کہنا قبیح قول ہے۔ خدا میں کوئی مجاز نہیں ہوتا، خدا ایک ہی ہے اور وہ حقیقی ہے۔ وہی شوہر کا خدا ہے اور وہی بیوی کا خدا ہے۔ اس لیے ایسے جملے بولنے سے احتراز ضروری ہے۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں